خیبر پختونخوا کے وزیر ٹرانسپورٹ اینڈ ماس ٹرانزٹ ملک شاہ محمد خان وزیر کی زیر صدارت محکمہ کے ترقیاتی سکیموں کے حوالے سے جائزہ اجلاس منعقد ہوا اجلاس میں ایڈیشنل سیکرٹری ٹرانسپورٹ، ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ، ڈائریکٹر پراجیکٹ خیبرپختونخوا اربن موبیلٹی اتھارٹی ،ڈائریکٹر بی آر ٹی ،چیف ایگزیکٹو آفیسر ٹرانز پشاور، بی آر ٹی کنسلٹنٹ، ڈپٹی ڈائریکٹر پی ڈی اے اور دیگر نے شرکت کی اجلاس میں محکمہ ٹرانسپورٹ کے صوبے اور ضم قبائلی اضلاع میں نئے اور جاری اے ڈی پی، اے آئی پی اور پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ سکیموں اور منصوبوں پر صوبائی وزیر ملک شاہ محمد خان وزیر کو تفصیلی بریفنگ دی گئی اجلاس میں مختلف سکیموں جن میں خیبر پختونخوا میں ٹرانسپورٹ انسپکشن سٹیشنز کاقیام، فزبیلٹی سٹڈی آف گریٹر پشاور ریجن ماس ٹرانزٹ دی سرکلر ریل روڈ پراجیکٹ، فزیبیلیٹی اینڈ اسٹبلشمنٹ آف ٹرکنگ ٹرمینلز ان خیبر پختونخوا ، جی ٹی روڈ پشاور پر ٹرانسپورٹ کمپلیکس کی قیام اورتعمیر ، ضلع بنوں اور سوات میں آر ٹی اے دفاتر کا قیام ، پشاور ماس ٹرانزٹ سسٹم کی تعمیر ، ضم اضلاع میں ٹرانسپورٹ فیسیلیٹیشن سنٹرز کا قیام اور دیگر سکیموں پر سیر حاصل بحث ہوئی اجلاس میں صوبائی وزیرٹرانسپورٹ کو بتایا گیا کہ پشاور ماس ٹرانزٹ سسٹم سکیم کو اسی سال 30 نومبر تک مکمل کیا جائے گا اس موقع پر صوبائی وزیر ملک شاہ محمد خان وزیر نے متعلقہ حکام کو ہدایت جاری کی کہ مذکورہ منصوبے پر کام کی رفتار کو تیز کرکے مقررہ وقت میں پایہ تکمیل تک پہنچائے عوام کی بہتر مفاد میں تمام منصوبے بروقت مکمل کی جائیں اجلاس میں گریٹر پشاور ریجن ماس ٹرانزٹ دی سرکلر ریل روڈ پراجیکٹ کی فیزیبلیٹی سٹڈی کیلیے ایک کمیٹی تشکیل دے دی گئی جو ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ، ڈائریکٹر پراجیکٹ خیبر پختونخوا اربن موبیلیٹی اتھارٹی ، سینئر پلاننگ آفیسر، ڈپٹی ڈائریکٹر ٹیکنیکل اور سول محکمہ ٹرانسپورٹ پر مشتمل ہوگا صوبائی وزیر نے کہا کہ ٹرانسپورٹ نظام میں بہتری لانے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لا رہے ہیں موجودہ صوبائی حکومت عوام کو سہولیات مہیا کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھا رہی ہیں.