وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے پیر کے روز مون سون شجرکاری مہم2022 کا باضابطہ اجرا کر دیا ہے مہم کے تحت صوبہ بھر میںتین کروڑ 75 لاکھ پودے لگائے جائیں گے ۔ وزیراعلیٰ محمود خان نے وزیراعلیٰ ہاﺅس کے سبزہ زار میں پودا لگا کر مہم کا افتتاح کیا۔ صوبائی وزراءاشتیاق ارمڑ ، تیمور سلیم جھگڑا، کامران بنگش اور فیصل امین گنڈا پور کے علاوہ سیکرٹری جنگلات و ماحولیات عابد مجید اور دیگر اعلیٰ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیراعلیٰ کو مون سون مہم کے تحت شجرکاری سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ مہم کے تحت صوبہ بھر میں مجموعی طور پر تین کروڑ 75 لاکھ پودے لگائے جائیں گے ۔ مزید بتایاگیا کہ مہم کے دوران سنٹرل ساوتھ ریجن I بشمول ضم اضلاع میں ایک کروڑ 96 لاکھ پودے لگائے جائیں گے جبکہ ناردرن فارسٹ ریجن II میں 89 لاکھ پودے لگائے جائیں گے ۔ اسی طرح ملاکنڈ فارسٹ ریجن III میں 90 لاکھ سے زائد پودے لگائے جائیں گے ۔یہ پودے محکمہ جنگلات ، سول سوسائٹی، تعلیمی اداروں ، سرکاری محکموں اور دیگر سرکاری اور نجی اداروں کی مدد سے لگائے جائیں گے ۔ وزیراعلیٰ کو بتایا گیا کہ رواں سال موسم بہار شجرکاری مہم کے تحت آٹھ کروڑ سے زائد پودے لگائے گئے ہیں اور ان پودوںکے تحفظ کو بھییقینی بنایا جارہا ہے۔ وزیراعلیٰ نے ا س موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ درخت اور نباتات روئے زمین پر قدرت کا ایک انمول تحفہ ہیں اور ان کا تحفظ اور فروغ ہم سب کی اجتماعی ذمہ داری ہے ۔ اُنہوںنے کہاکہ صوبے میں جنگلات کا تحفظ اور شجرکاری کا فروغ شروع دن سے ہی صوبائی حکومت کی اہم ترجیحات میں شامل رہا ہے ۔ بڑھتی ہوئی آبادی او ر ماحولیاتی آلودگی سے پیدا ہونے والے مسائل سے نمٹنے کیلئے جنگلات کی اہمیت پہلے سے زیادہ بڑھ گئی ہے ۔ اُنہوںنے مزید کہاکہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے وژن کے مطابق ماحولیاتی آلودگی اور موسمی تبدیلیوں سے پید ا ہونے والے چیلنجز سے نمٹنے کیلئے ایک جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات اُٹھانے کا کریڈٹ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو جاتا ہے۔ اس سلسلے میں پی ٹی آئی کی سابق حکومت نے بلین ٹری سونامی منصوبہ شروع کیا تھا جس کے تحت صوبے میں ایک ارب پودے لگانے کا ہدف کامیابی سے حاصل کر لیا گیا ہے۔