پارلیمنٹری ویمن کاکس کا خاص طور پر مشکور ہوں جنہوں نے صنفی اشتراک سے متعلق بجٹ تیاری کے لئے تجاویز فراہم کیں، دوسرا سال ہے ہم خواتین سمیت دیگر صنفوں کے اشتراک پر مبنی بجٹ پیش کررہے ہیں، پچھلے مالی سال میں خواتین کیلئے خصوصی اقدامات اُٹھانے کی خاطر ایک ارب روپے مختص کئے گئے تھے، اس سال اس سے بھی زیادہ رقم مختص کرینگے اور ان منصوبوں کے نفاذ کیلئے ویمن کاکس کی سپورٹ بھی لینگے تاکہ خواتین کی ترقی میں بھی خیبرپختونخوا پورے ملک کو رہنمائی کرسکے۔ خیبر پختونخوا کے وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم جھگڑا نے پا رلیمنٹری ویمن کاکس کاشکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ ویمن کاکس نے امسال بھی صنفی اشتراک پر مشتمل بجٹ تیاری میں تجاویز و ترجیحات فراہم کیں، دوسرا سال ہے ہم خواتین سمیت دیگر صنفوں کے اشتراک پر مبنی بجٹ پیش کررہے ہیں۔ وہ عمر اصغرخان فاونڈیشن اور شرکت گاہ کے ا شتراک سے صنفی اشتراک پر مشتمل بجٹ پیش کرنے سے متعلق تجاویز اور ترجیحات بارے میں پارلیمنٹری ویمن کاکس کے زیر اہتمام اجلاس کی صدارت کررہے تھے۔ اجلاس میں چئیر پرسن پارلیمنٹری ویمن کاکس ڈاکٹر سمیرا شمس، ا اراکین صوبائی اسمبلی مدیحہ نثار، انیتہ محسود، آسیہ خٹک، آسیہ اسد، ساجدہ حنیف، زینت بی بی، نعیمہ کشور، حمیرہ خاتون، صوبائی محتسب رخشندہ ناز اور عمر اصغر خان فاونڈیشن کے اہلکاروں سمیت دیگر شرکا نے شرکت کی۔ وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم جھگڑا نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے مالی سال میں خواتین کی ترقی و فلاح و بہبود کیلئے خصوصی اقدامات اُٹھانے کے پیش نظرایک ارب روپے مختص کئے گئے تھے جبکہ امسال اس سے بھی زیادہ رقم مختص کرینگے اور ان منصوبوں کے نفاذ کیلئے ویمن کاکس کی سپورٹ بھی لینگے تاکہ خواتین کی ترقی میں بھی خیبر پختونخوا پورے ملک کیلئے مثال بن سکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سب سے زیادہ خواتین ہسپتالوں میں کام کرتی ہیں ان کیلئے ہسپتالوں میں ڈے کئیر سنٹرز ہونی چاہئے۔ اس سے قبل پارلیمنٹری ویمن کاکس کی چئیرپرسن ڈاکٹر سمیرا شمس نے آئندہ بجٹ میں صنفی اشتراک کو یقینی بنانے کے لئے مختلف منصوبوں بارے تجاویز اور ترجیحات پیش کیں۔ دارلامان کیلئے پچھلے سال دو سو ملین مختص کئے گئے تھے جو کہ اس سال دگنا کرنے کی تجویز ہے۔چئیر پرسن نے ویمن ڈویلپمنٹ سوشل ویلفئیر سے علیحدہ کرکے منسٹری کا درجہ دیکر اسے مزید فعال بنانے کی بھی تجویز پیش کی جس سے خواتین ایم پی ایز کی حوصلہ افزائی ہوگی۔