وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کی زیر صدارت اسپیشل اکنامک زون اتھارٹی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اجلاس میںاتھارٹی کیلئے سٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجرز (ایس او پیز) کی منظوری دی گئی ہے ۔ اجلاس میں مہمند ماربل سٹی کو اسپیشل اکنامک زون کا درجہ دینے اور اس مقصد کیلئے مزید 2000 ایکڑ اراضی کی خریداری کی بھی منظوری دی گئی ہے ۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکام کو ورسک روڈ ، ملا گوری اور شبقدر میں قائم ماربل کارخانوں کی مہمند ماربل سٹی میں منتقلی کے عمل کو تیز کرنے جبکہ اکنامک زونز میں سرمایہ کاروں کو سہولیات کی بروقت فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے ۔ اُنہوںنے مزید ہدایت کی کہ صوبے میں اکنامک زونز اور انڈسٹریل اسٹیٹس میں پلاٹ الاٹ ہونے کے چھ مہینے کے اندر اگر صنعت لگانے پر عملی کام شروع نہ ہو توپلاٹ کی الاٹمنٹ منسوخ کر دی جائے ۔ اُنہوںنے کہاکہ اصل مقصد صوبے میں صنعتوں کو فروغ دینا اور روزگار کے مواقع پیدا کرنا ہے جس کیلئے محکمہ صنعت سمیت تمام سٹیک ہولڈرز کو اپنی ذمہ داریاں طے شدہ ٹائم لائنز کے مطابق مکمل کرنے کی ضرورت ہے ۔ خیبرپختونخوا اسپیشل اکنامک زون اتھارٹی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کا ساتواں اجلاس منگل کے روز وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں منعقد ہوا ۔ وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے صنعت عبد الکریم کے علاوہ بورڈ کے سرکاری اور نجی شعبے سے تعلق رکھنے والے دیگر ممبران نے اجلاس میں شرکت کی ۔ اجلاس کو بورڈ کے سابقہ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں پر عمل درآمد کی پیشرفت کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ وفاقی بورڈ آف انوسٹمنٹ نے رشکئی اسپیشل اکنامک زون کیلئے زونز ریگولیشن کی باقاعدہ منظوری دے دی ہے اور ان ریگولیشنز کو رشکئی اسپیشل اکنامک زون پر دستخط شدہ ترقیاتی معاہدے کا حصہ بنایا گیا ہے ۔ علاوہ ازیں رشکئی اسپیشل اکنامک زون کے سپیشل پرپز وہیکل کی سکیورٹی ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے ساتھ رجسٹریشن ہو چکی ہے ۔اجلاس میں اسپیشل اکنامک زون اتھارٹی کیلئے مجوزہ ایس او پیز کی بھی منظوری دی گئی اور ان ایس او پیز کو حتمی منظوری کیلئے بورڈ آف انوسٹمنٹ اسلام آباد کو پیش کرنے کی ہدایت کی گئی ۔ اجلاس کو مہمند اکنامک زون کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ یہ زون 350 ایکڑ کے رقبہ پر مشتمل ہے ۔