تین سو میگاواٹ بالاکوٹ ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی تعمیر کیلئے خیبرپختونخوا حکومت اور چینی تعمیراتی کمپنی کے مابین کنٹریکٹ ایگریمنٹ پر دستخط کئے گئے ۔ اس سلسلے میںایک تقریب منگل کے روز وزیراعلیٰ ہاﺅس پشاور میں منعقد ہوئی جس کے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان تھے ۔ صوبائی وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا، وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے توانائی حمایت اﷲ، ، سیکرٹری توانائی اور دیگر متعلقہ حکام بھی تقریب میں شریک تھے ۔ بالاکوٹ ہائیڈرو پاور پراجیکٹ توانائی کے شعبے میںصوبائی حکومت کا سب سے بڑا منصوبہ ہے جو ایشیائی ترقیاتی بینک کی معاونت سے چھ سال کی مدت میںمکمل کیا جائے گاجس پر تقریباً پیچاسی ارب روپے لاگت آئے گی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے مذکورہ منصوبے کو صوبے کی ترقی و خوشحالی کیلئے نہایت اہم منصوبہ اور توانائی کے شعبے میں صوبائی حکومت کی بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگلے مہینے کے وسط تک منصوبے کی تعمیر پر کام کا باقاعدہ آغاز کیا جائے گا اور توقع ہے کہ وزیراعظم عمران خان خود اس میگا منصوبے کا سنگ بنیاد رکھیں گے ۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ یہ صوبائی حکومت کا شعبہ توانائی میں سب سے بڑا منصوبہ ہے جو بجلی کی پیداوار میں اضافے ، روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے ، صنعتوں کی ترقی اورصوبے کی خوشحالی میں اہم کردار ادا کرے گا۔ وزیراعلیٰ نے مزید کہاکہ منصوبے کی تکمیل سے صوبائی حکومت کو سالانہ چودہ ارب روپے کی آمدن متوقع ہے جبکہ منصوبے کی تعمیر کے دوران ملازمت کے چار ہزار سے زائد مواقع پیدا ہوں گے ۔اُنہوںنے کہاکہ بالاکوٹ ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی تکمیل سے مقامی صنعتوں اور گھریلو صارفین کو سستے نرخوں پر بجلی فراہم کی جائے گی ۔ وزیراعلیٰکا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت صوبے میں موجود پن بجلی کی استعداد سے بھر پور استفادہ کرنے کیلئے موثر حکمت عملی کے تحت اقدامات اُٹھا رہی ہے ۔ پیڈو کے تحت صوبے میں ایک سو ساٹھ میگاواٹ کے ہائیڈور پاور پراجیکٹس مکمل کئے جا چکے ہیں جبکہ دو سوسولہ میگاواٹ کی مجموعی پیدواری استعداد کے حامل چھوٹے بڑے متعدد پن بجلی منصوبوں پر کام جاری ہے ۔