صوبائی وزیر تعلیم شہرام خان ترکئی نے ہدایت جاری کی ہے کہ این ٹی ایس اور ایٹا دونوں ٹیسٹنگ ایجنسیاں جنوری کے مہینے تک بھرتیوں کا عمل مکمل کریں۔ پورے صوبے میں میل اور فیمیل امیدواروں کے لیے علیحدہ امتحانی خال ہوں گے۔ بھرتیوں کا تمام عمل خالص میرٹ پر ہوگا۔ اگر پرچہ آؤٹ ہوا یا دوسری کوئی شکایت ہوئی تو متعلقہ ایجنسی کے خلاف قانونی کارروائی ہوگی۔ ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد ہوگا اور امتخانی ہال میں ماسک کا استعمال لازمی ہوگا۔ جبکہ بھرتیوں کے عمل کی بروقت تکمیل کے لیے ہفتہ اور اتوار کے علاوہ دیگر دنوں میں بھی ٹیسٹ منعقد کیے جائیں گے۔

یہ ہدایات صوبائی وزیر تعلیم نے این ٹی ایس اور ایٹا ٹسٹنگ ایجنسیوں کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کی سیکرٹری ایجوکیشن ندیم اسلم چودھری، سیکرٹری ہوم اکرام اللہ خان ، سپیشل سیکرٹری ایجوکیشن ظریف المعانی، اور دونوں ٹیسٹنگ ایجنسیوں کے سربراہان بھی اس موقع پر موجود تھے۔

وزیر تعلیم شہرام خان ترکئی نے کہا کہ امیدواروں کی سہولت کے لیے ایپلائی تاریخ کو بڑھا دیا گیا ہے جبکہ فیس جمع کرنے کے لیے بینکوں کی تعداد میں بھی اضافہ کیا گیا ہے تاکہ غیر ضروری رش سے بچا جا سکے۔

انہوں نے این ٹی ایس حکام کو ہدایت کی کہ چیف انسٹرکٹر اور دوسرے ذمہ دار ممتحن دوسرے صوبوں سے لگائے جائیں جبکہ اگلے بار جو بھی بھرتیاں ہوگئی ٹیسٹنگ ایجنسی طلباء کی سہولت کے لیے چار بینکوں میں فیس جمع کرنے کی سہولت مہیا کرنے کی پابند ہوگی۔

شہرام خان ترکئی نے ہدایت کی کہ اقلیتوں کے حقوق کی تحفظ کے لیے پرچوں میں اخلاقیات کے سوالات شامل کیے جائے اور یہ ٹیسٹنگ ایجنسی کی ذمہ داری ہوگی کہ وہ فارم میں یہ سہولت مہیا کرے گی کہ اقلیتوں کی نشاندہی پر ان کے لیے پیپر میں اخلاقیات کے سوالات میں شامل کریں۔