پختونخوا اسمبلی کی رکن انیتا محسود نے جنوبی وزیرستان میں تیز رفتار ترقی کے ایکسلی ریٹڈ ایمپلی منٹیشن پلان کے تحت ملنے والے فنڈز سے اسکولوں میں سہولیات کی فراہمی کے منصوبوں کا افتتاح کردیا، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر جنوبی وزیرستان جناب زیت اللہ خان وزیر کے ہمراہ گورنمنٹ مڈل سکول مرغی بند اور گورنمنٹ مڈل سکول فتح شیر کوٹ میں اے آئی پی کے تحت تعمیراتی کام کا افتتاح کرتے ہوئے انہوں نے اسے ترقی کے نئے دور کا آغاز قرار دیا اور کہا کہ یہ قبائلی عوام سے کیے گئے وعدوں کی تکمیل کی جانب اہم قدم ہے۔ ان منصوبوں کی تفصیلات بتاتے ہوئے ایڈیشنل ڈائریکٹر پی اینڈ ڈی برائے نئے ضم شدہ اضلاع فرید خٹک نے بتایا کہ اے آئی پی کے تحت سات اضلاع اور چھ ضم شدہ ایف آرز کیلئے تین ارب روپے مختص کیے گئے ہیں، جس سے ان علاقوں میں اسکولوں میں چاردیواری کی تعمیر، کلاس رومز کی مرمت، پینے کے پانی کی فراہمی، بیت الخلا کی تعمیر، کھیلوں کیلئے مخصوص مقامات (میدان اور پلے ایریاز) تعمیر کیے جائیں گے۔ اسکولوں کی چاردیواری کی تعمیر کیلئے بارہ لاکھ روپے، کمروں کی مرمت کیلئے ایک لاکھ روپے، پینے کے پانی کی فراہمی کیلئے دو لاکھ روپے، بیت الخلا کی تعمیر کیلئے ایک لاکھ ساٹھ ہزار روپے، اور کھیلوں کی سہولیات کیلئے ایک لاکھ بیس ہزار روپے دیے جائیں گے۔ اس کے علاوہ اسکول بیگز، نصابی کتب اور سٹیشنری کیلئے تین سو پچیس ملین روپے رکھے گئے ہیں۔ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر جنوبی وزیرستان جناب زیت اللہ خان وزیر نے موجودہ حکومت اے آئی پی کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ موجودہ حکومت ان علاقوں میں ایجوکیشن کی بہتری کے لے کوشاں ہے۔