مشیرسائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی ضیاء اللہ خان بنگش نے کہاہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے بہترین طرز حکمرانی اور عوامی سہولیات کے پیش نظر محکمہ پولیس میں بہترین اصلاحات متعارف کیں۔ جس کی بدولت سیاسی مداخلت کے خاتمے کیساتھ ساتہ میرٹ پرٹرانسفرپوسٹنگ، پولیس کو بہترین تربیت کی فراہمی کیساتھ عوام اور پولیس کے درمیان اچھے روابط قائم کئے گئے۔ نتیجتاّ آج پورے پاکستان میں خیبرپختونخوا پولیس کی مثالیں دی جاتی ہیں اور انہیں عوام دوست پولیس کا خطاب دیاجاتاہے۔ وہ پولیس ریفارمز ایکٹ کے حوالے سے پشاور میں منعقدہ سیمینار سے خطاب کررہے تھے سیمینار میں محکمہ پولیس،میڈا، وکلاء اورسول سوسائٹی کے راہنماؤں نے شرکت کی۔ ضیاء اللہ خان بنگش نے کہاکہ صوبے میں امن وامان کے قیام کی غرض سے پولیس میں اصلاحات کے گئے۔ جبکہ ریفارمز ایکٹ پرپولیس نے منتخب نمائندوں کو بھی بریفنگ دی جسکی بدولت عوامی مسائل میں خاطرخواہ کمی آئی ہے۔ تاہم ہماری حکومت اصلاحات کے ایجنڈے پرکام کررہی ہے اورجہاں کہیں بھی بہتری کی گنجائش ہو ہم کیبنٹ، اسمبلی کی ذیلی کمیٹیوں اور محکمہ قانون کے ذریعے مزید ترامیم کرکے اصلاحات لائیں گے۔ تاکہ عوامی مسائل ان کی دہلیز پر حل ہوسکیں۔
مشیرسائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجیز نے ڈیجیٹیل پاکستان پالیسی کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ ہم نے محکمے کی طرف سے پہلے ہی محکمہ پولیس میں آن لائن ایف آئی آر کا اجراء کیا ہے جبکہ عوام کو سہولیات کی فراہمی کیلئے محکمہ پولیس میں مزید ڈیجیٹل اصلاحات بھی متعارف کئے جائیں گے۔ جس کیلئے پالیسی سازی کی جارہی ہے۔ محکمہ پولیس کی طرف سے پولیس ریفارمز ایکٹ پر ڈی ایس پیز فضل الرحمن اور ظفر نے شرکاء کو بریفنگ دی جبکہ الفلاح فاؤنڈیشن کی طرف سے مزید اصلاحات لانے کیلئے مہرسلطانہ نے تجاویز پیش کیں۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ضیاء اللہ خان بنگش نے کہاکہ پولیس کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑہی ے ان کے شہدا پیکج اور مزید سہولیات کی فراہمی کیلئے بھی خصوصی اقدامات کئے جائیں گے۔ جبکہ بجٹ کی فراہمی اورترقیوں، سروس سٹرکچر اوردیگر اہم کاموں میں محکمہ پولیس کو مکمل طور پر بااختیاربنایاگیاہے۔