وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ پڑوسی ملک افغانستان میں امن کی بحالی پورے خطے کے مفاد میں ہے ۔ خیبرپختونخوا بتدریج امن کے استحکام اور بہتری کی طرف گامزن ہے ، ہم سب پاکستانی ہےں اور اس ملک اور صوبے کو آگے لے کر جانا ہم سب کی اجتماعی ذمہ داری ہے ۔ وزیراعظم عمران خان دن رات ملک کو مشکل حالات سے نکالنے کے لئے کوشاں ہےں۔ پاکستان کی ترقی اور خوشحالی ہی ہمارا ایجنڈا ہے ، ہم پاکستان کو ایک عظیم ملک بنانے کے لئے تمام تر کوششیں بروئے کار لائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعلیٰ ہاو¿س پشاور میں سکےورٹی اداروں کے ایک اعلیٰ سطح اجلاس کی صدارت کرتے ہو ئے کیا ہے ۔ وزیراعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری شہاب علی شاہ اور دیگر متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ وزیراعلیٰ نے موجودہ حکومت کی ترجیحات ، خطے میں امن کی بحالی اور دیگر اہم پہلوو¿ں پر سیر حاصل گفتگو کی۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی موجودہ حکومت کامیابی کے ساتھ اپنے ایجنڈے کی تکمیل کی طرف گامزن ہے ، ہم پاکستان کو ایک خوشحال اور ترقی یافتہ ملک دیکھنا چاہتے ہےں ۔ پڑوسی ملک افغانستان کےساتھ تعلقات کے حوالے سے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے محمود خان نے کہا کہ افغانستان میں امن کی بحالی پورے خطے کے مفاد میں ہے ، صوبائی حکومت اپنی طرف سے افغانستان کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کی بہتری اور باہمی تجارت کے لئے ہر ممکن اقدام کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان کے ساتھ طورخم بارڈر کو چوبیس گھنٹوں کے لئے کھولا کیا گیا ہے، جو ہماری بہتر تعلقات کے لئے خواہش کا عملی ثبوت ہے ۔ ضم شدہ قبائلی اضلاع کے حوالے سے حکومتی ترجیحات کا ذکر کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبائی حکومت شروع دن سے قبائلی عوام کے مسائل کے حل کے لئے کوشاں ہےں ، اور ان کے دیرینہ مسائل مشاور ت کے ساتھ حل کئے گئے ہے۔