سینئر وزیر عاطف خان کے ساتھ سول سیکرٹریٹ پشاور میں سری لنکن ہائی کمشنر کی ملاقات۔ ملاقات میں مذہبی سیاحت، دوطرفہ تعلقات اور مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے حوالے سے تفصیلی گفتگو۔ سینئر وزیر نے ہائی کمشنر کو صوبے میں مذہبی سیاحت کے مواقعوں سے آگاہ کیا۔ سری لنکا میں %72 بدھ مت مذہب کے لوگ آباد ہے۔ خیبر پختون خوا حکومت کی طرف سے بدھ مت کے مذہبی مقامات محفوظ کرنا خوش آئند ہے۔ جنوری اور فروری میں سری لنکا کے بدھ مت کا وفد پاکستان اور خصوصا خیبر پختون خوا کا دورہ کریں گے۔ وفد بدھ مت کے مقدس مقامات پر عبادات اور اپنے مذہبی رسومات ادا کریں۔ صوبے میں بدھ مت کے 2000 مقدس مقامات موجود ہیں جو 2 ہزار سال سے زائد تاریخ رکھتی ہے۔ بدھ مت کے مقدس مقامات سمیت صوبے میں موجود تمام ارکیالوجیکل سائٹس کو محفوظ بنانے کے لئے 1 ارب مختص کئے گئے ہیں۔ تمام ارکیالوجیکل سائٹس پر بین القوامی معیار کی سہولیات فراہم کی جارہی ہے۔ ۲۲ کروڑ روپے تخت بھائی میں موجود بدھ مت کے آثار قدیمہ پر خرچ کئے جارہے ہیں۔ مذہبی سیاحت کو فروغ دینے اور صوبے میں موجود ارکیالوجیکل سائٹس کے حوالے سے جلد بین القوامی کانفرنس منعقد کیا جائیگا۔ کانفرنس میں مختلف ممالک کے سفراء کو مدعو کیا جائیگا۔