وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے ناروے میں قرآن پاک کی بےحرمتی کے واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ وزیر اعلیٰ سیکریٹریٹ سے جاری کردہ ایک بیان میں وزیراعلی نے واضح کیا کہ واقعے سے پوری دنیا میں مسلمانوں کی دل آزاری ہوئی ہے جس پر عالم اسلام میں شدید غم و غصہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ دنیا میں کسی بھی مذہب اور مقدس کتوب کی توہین کرنا ناروا اقدام ہے جبکہ اسلام کسی بھی مذہب کی توہین کرنے کی اجازت نہیں دیتا۔ مذہب کے خلاف وحشیانہ اقدام سے مذہبی منافرت بڑھتی ہے۔ انھوں نے واضح کیا کہ یہ واقعہ مسلم اُمہ کے خلاف ایک سازش ہے جبکہ ایک مخصوص گروہ کا اس قسم کی حرکت پر انسانی حقوق کے اداروں کی خاموشی انتہائی تشویشناک ہے۔ کسی بھی مذہب اور مقدس مقامات کی بے حرمتی سے عالمی امن کو خطرات لاحق ہونگے۔ ناروے حکومت کی ذمہ داری ہے کہ بدامنی پھیلانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کرے۔ انھوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت ہر فورم پر اس کے خلاف آواز بلند کرے گی۔