چیف سیکرٹری خیبر پختون خوا کی ھدایت پر ڈی جی کے پی فوڈ اتھارٹی کی تشکیل کردہ خصوصی ٹیمز کا صوبے کے طول و عرض میں ”آپریشن ضرب ملاوٹ” کے تحت ملاوٹ مافیا کے خلاف کارروائیاں جاری ہیں۔ ڈائریکٹر آپریشنز ڈاکٹر عظمت وزیر کا کہنا ہے کہ خوراک کو ملاوٹ سے پاک کرنے کی ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے اور اس سلسلے میں تمام افسران کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئی ہیں۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ تمام افسران نے ہفتے اور اتوار کے روز بھی کاروائیاں جاری رکھیں اور وہ خود بھی فیلڈآپریشنز میں شریک رہے۔ ہفتہ اور اتوار کو کی گئی کارروائیوں کی تفصیل بتاتے ہوئے ڈائریکٹر آپریشنز ڈاکٹر عظمت وزیر کا کہنا ہے کہ ان دو دنوں میں اشیائے خوردونوش کی کل 709 جگہوں کا معاینہ کیا گیا جن میں ریسٹورنٹس، ملک شاپس، فییکٹریاں، بیکریاں اور کریانے کی دکانیں شامل ہیں، ان کاروائیوں میں 50 کے قریب غیر معیاری خوراک بنانے کے مراکز کو سربمہر کر دیا گیا اور 12 ہزار کلو غیر معیاری خوراک کو تلف کر دیا گیا۔ اس دوران خوراک گردی میں ملوث افراد پر بھاری جرمانے عائد کر دئے گئے۔ ڈائرکٹر آپریشن ڈاکٹر عظمت وزیر کا کہنا تھا کے صوبائی حکومت کی جانب سے ملاوٹ سے پاک خوراک کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے شروع کی گئی مھم شب و روز جاری رہیگی اور عوام اس بارے میں مکمل اطمنان رکھیں محفوظ خوراک کی فراہمی ڈیوٹی کے علاوہ ہمارا قومی اور مذہبی فریضہ بھی ہے۔