حکومت خیبرپختونخوا، بین الاقوامی سطح کی ایک پبلک یونیورسٹی قائم کر رہی ہے جو خیبر پختونخوا، پاکستان اور پوری دنیا کے طلباء کو بہترین تعلیمی سہولیات فراہم کرے گی جس کی کلاسز اگلے برس سے شروع ہونے کی توقع ہے یہ ایک تاریخی اور منفر اقدام ہے کیونکہ یہ غیر ملکی یونیورسٹیوں کے تعاؤن سے پاکستان میں قائم ہونے والا اولین ترین ادارہ ہوگا جس کے طلبہ یہاں تعلیم حاصل کریں گے اس ادارے کے قیام کا مقصد صوبے میں اعلیٰ تعلیمی نظام اور سائنسی تحقیق تک رسائی کی سہولت فراہم کرنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار خیبرپختونخوا کے وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑانے ضلع ہری پور میں زیرتعمیر پاک آسٹریا فیکوچ شو ل یونیورسٹی کے دورے کے موقع پر کیا۔ مذکورہ یونیورسٹی آسٹریا اور چین کے تعاون سے تعمیر کی جائے گی جبکہ اس یونیورسٹی میں بین الاقوامی معیار کے مطابق معیاری تعلیم کی فراہمی کے لیے بین الاقوامی معیار کا تدریسی عملہ تعینات کیا جائے گا۔ صوبائی وزیر خزانہ نے سیکرٹری محکمہ اعلیٰ تعلیم منظور احمد اور دیگر متعلقہ حکام کے ہمراہ زیر تعمیر عمارت کا تفصیلی معائنہ کیا جبکہ اس موقع پر انہیں مذکورہ پراجیکٹ کے بارے میں تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی انہیں بتایا گیا کہ یہ پراجیکٹ 2016 میں شروع کیا گیا جو2023 میں مکمل ہوگا اور اس پر کام کے معیار اور رفتار کو یقینی بنانے کے لئے اس کی موثر نگرانی بھی کی جا رہی ہے جبکہ اس انسٹیٹیوٹ میں قائم کیے جانے والے شعبوں میں میگاٹرونکس، انڈسٹریل پراسیس انجینئرنگ، ملٹی میڈیاسٹڈیز ،اپلائیڈ کمپیوٹر سائنسز ،میڈیکل ٹیکنالوجییز، انرجی انوائرمنٹ انجینئرنگ، الیکٹریکل انجینئرنگ اور سول انجینئرنگ کے شعبے شامل ہونگے۔