ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر خطیر احمد نے صوبائی وزیر کو ایمرجنسیز میں خدمات و سہولیات بارے  بریفنگ دی۔ صوبائی وزیر نے محکمہ صحت سے ملنے والی ایمبولینسز کا معائنہ کیا۔ صوبائی حکومت کی جانب سے فراہم کردہ فنڈز سے محکمہ صحت کی ایمبولینسز کو مرحلہ وار جدید ترین آلات سے لیس کیا گیا ہے، ایمبولینسز کو اب مختلف اضلاع بھیجا جارہا ہے، ایمبولینسز میں مریض و زخمی کو عارضی سانس فراہم کرنے کے لیے فکس اور پورٹیبل 2 بڑے اکسیجن سلینڈر نصب ہیں، بلڈ پریشر، شوگر، بخار ناپنے والے آلات، سکشن مشین، ایمرجنسی میڈیکل، ٹراما منیجمنٹ کیٹس بھی ہے، حاملہ خواتین کے لیے ڈیلیوری کٹس، پیشنٹ مانیٹرنگ ڈیوائس، سکشن مشین، سپین بورڈ، سٹریچر، فائر ایکسٹینگویشر اور ایمبولینس کی تزین و آرائش شامل ہے۔ صوبائی وزیر نے ریسکیو1122 کی کارکردگی کو سراہا۔ خیبر پختونخوا میں عمران خان کے وژن خدمات سب کے لیے پر عملی کام جاری ہے۔ ریسکیو کی بہترین کارکردگی کو مدنظر رکھتے ہوئے وزیرستان سے لے کر کوہستان تک دائرہ کار بڑھا دیا گیا ہے، خیبر پختونخوا کے خوددار بجٹ میں ریسکیو1122  اب ضلعوں سے بڑھا کر مرحلہ وار تحصیل تک پھیلایا جائیگا۔