خیبر پختونخوا کے وزیر قانون فضل شکور خان نے نیشنل لاجسٹک سیل اور پختونخوا ہائی ویز اتھارٹی کے عہدیداران کو ہدایت کی ہے کہ خیالی پل، مچنی پل، مترا پل اور کبابیان پل کے ترقیاتی کاموں کو عوامی مفادات کے لیے جلد از جلد پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ان پلوں پر جاری کام کو انتہائی سنجیدگی سے لیا جائے اور ترقیاتی کام کو مزید تیز کروایا جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیشنل لاجسٹک سیل کے ہیڈ آفس پشاور کے دورے کے موقع پر ترقیاتی کاموں کے حوالے سے منعقدہ جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں پراجیکٹ ڈائریکٹر نیشنل لاجسٹک سیل ندیم احمد، ایس پی ایم نیشنل لاجسٹک سیل آصف ابرار، ڈائریکٹر پختونخواہ ہائی ویز اتھارٹی اعجاز احمد، ڈپٹی ڈائریکٹر پختونخواہ ہائی وے اتھارٹی عثمان شنواری اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ تقریب میں صوبائی وزیر قانون کو خیالی پل، مچنی پل، مترا پل، کبابیان پل اور دیگر ترقیاتی سکیموں پر جامعہ بریفنگ دی گئی۔ پراجیکٹ ڈائریکٹر نیشنل لاجسٹک سیل ندیم احمد نے تمام سکیموں کی بنیادی ضروریات اور فنڈنگ سے آگاہ کیا۔فضل شکور خان نے ہدایت کی کہ پختونخواہ ہائی ویز اتھارٹی اور نیشنل لاجسٹک سیل مشترکہ طور پر عوامی مفادات کے لیے شروع کیے گئے منصوبوں کو اپنے اپنے مقررہ وقت میں مکمل کروائیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام ترقیاتی کاموں میں اعلیٰ کوالٹی کے میٹریل کے استعمال کو یقینی بنایا جائے تاکہ عوامی مفادات کے لیے جاری کیے گئے فنڈنگ کا صحیح استعمال عمل میں لایا جا سکے۔ اس موقع پر این ایل سی اور پی کے ایچ اے کے حکام نے معیاری اور بروقت کام مکمل کروانے کی یقین دھانی کرائی۔ وزیر قانون نے کہا کہ ان پلوں کی تعمیر سے عوام کو درپیش سفری مسائل پر کافی حد تک قابو پالیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ترقی کا یہ سفر اسی طرح جاری رہے گا اور صوبائی حکومت حقیقی معنوں میں عوامی مفادات کو ترجیح دے رہی ہے جس کے لئے کئی اہم اور بڑے ترقیاتی منصوبے جاری کیے گئے ہیں تاکہ ان کی تکمیل سے عوام کو ہر طرح کے سہولیات فراہم کی جا سکیں۔