خیبر پختونخوا کے وز یر برائے ابتدائی و ثانوی تعلیم شہرام خان ترکئی نے ایجوکیشن حکام کو ہدایت کی ہے کہ یکم مارچ سے سیکنڈ شفٹ سکولز پروگرام کے لئے اساتذہ کی بذریعہ پیرنٹس ٹیچرز کونسل تعیناتی کا عمل مکمل کریں جو مستقل اساتذہ عارضی طور پر تعینات تھے ان کو فروری کے بعد توسیع نہ دی جائے۔ انہوں نے یہ بھی ہدایت کی کہ جن اضلاع میں ضرورت ہے وہاں مزید سکول بھی پروگرام میں شامل کئے جائے انہوں نے کہا کہ یہ پروگرام موجودہ حکومت کا فلیگ شپ منصوبہ ہے اور ابھی تک 23ہزار 403 سے زائد طلباء و طالبات کو داخلہ دیا گیا ہے جو کسی بھی مجبوری کے تحت پہلے شفٹ میں تعلیم حاصل نہیں کر رہے ہیں۔ یہ ہدایات انہوں نے سیکنڈ شفٹ سکول پروگرام کے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کی۔ اجلاس میں سپیشل سیکرٹری ایجوکیشن عامر آفاق، ایڈیشنل سیکرٹری ریفارمز اشفاق احمد اور مختلف اضلاع کے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسرز نے شرکت کی۔ شہرام خان ترکئی کو بریفنگ کے دوران مختلف اضلاع کے سیکنڈ شفٹ سکولز کی فعالیت، طلباء و طالبات کی کارکردگی اور اساتذہ ودیگر سٹاف بارے بریفنگ دی گئی۔ شہرام خان ترکئی نے ایجوکیشن مانیٹرنگ اتھارٹی اور ڈائریکٹریٹ ٹیم کو ہدایت کی کہ سیکنڈ شفٹ سکولز کی سختی سے مانیٹر نگ کی جائے اور ماہانہ بنیادوں پر رپورٹ دی جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ پروگرام تمام اضلاع اور بالخصوص ان علاقوں کے لئے جہاں ہائی لیول کے تعلیمی ادارے دور ہیں ان کے لیے بڑی اہمیت کا حامل ہے ان کو اپنے علاقوں میں اعلی تعلیم کی سہولیات بھی میسر ہو نگی اور اگر کسی مجبوری کے تحت پہلے شفٹ میں سکول نہیں آ سکتے سیکنڈ شفٹ میں اعلی تعلیم حاصل کرکے ملک و قوم کی خدمت کر سکتے ہیں۔