آج خیبر پختونخوا رائٹ ٹو پبلک سروس کمیشن کے صوبائی ہیڈ کوارٹر یونیورسٹی ٹا¶ن پشاور میں ایک اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد ہوا جس کی صدارت آر ٹی ایس خیبر پختونخوا کے چیف کمیشنر محمد سلیم خان نے کی۔ اجلاس میں صوبے کے تمام تعلیمی بورڈز کے چیئرمین اور سیکرٹری صاحبان نے شرکت کی اس موقع پر تعلیمی بورڈز کے چیئرمین امتیاز ایوب بھی موجود تھے۔
سیکرٹری آر ٹی ایس محمد روز خان نے تمام شرکاءکو آر ٹی ایس کے قوانین۔ طریقہ کار اور عوام الناس کو سرکاری دفاتر میں سہولیات کی بہتر رسائی پر تفصیلی بات چیت کی ۔
اس موقع پر شرافت درانی کمیشنر آرٹی ایس تمام تعلیمی بورڈز کے ساتھ کی گئی خط و کتابت پر بھر پور روشنی ڈالی اور ان سہولیات کا ذکر کیا جو کہ تمام صوبے میں متعلقہ تعلیمی بورڈ طلبہ و طالبات کی آسانی کے لئے فراہم کر رہے ہیں اس موقع پر انہوں نے تمام بورڈز میں خدمات فراہم کرنے کے طریقہ کار کو شرکاءمیں واضح کیا۔
اس موقع پر صوبائی چیئرمین تعلیمی بورڈز امتیاز ایوب نے کہا کہ ہم آر ٹی ایس کو ان کی منظم کاوشوں کو سراہتے ہیں اور آج تمام صوبائی تعلیمی بورڈز کے چیئرمین اور سیکرٹریز کی یہاں موجودگی اس بات کا ثبوت ہے طلبہ و طالبات کیلئے بلخصوص والدین و عوام الناس بل عموم کی بہتر سہولیات کی رسائی کے لئے کوششیں کی جاری رہے ہیں اس کی کامیابی کا سہرا بجا طور پر آر ٹی ایس خیبر پختونخوا کو جاتا ہے کہ جنہوں نے شب و روز محنت کرکے خدمات تک رسائی اور اس فوائد سے نہ صرف عوام کو بروقت آگاہی دی بلکہ اب لوگ اس کے ثمرات سے مستفید ہو رہے ہیں۔
اس موقع پرسابق صوبائی چیف سیکرٹری اور چیف کمیشنر رائٹ ٹو سروس پبلک سروس کمیشن خیبر پختونخوا محمد سلیم خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کمیشن کی سب سے اولین ذمہ داری یہ ہے کہ تمام صوبائی محکمہ جات میں سروس ڈیلیوری کو بروقت آسان اور سہل بنایا جائے اس کے لئے تمام صوبائی اداروں میں نمائندے مقرر ہیں جن سے عام عوام اُن تمام سہولیات کو انتہائی آسانی کے ساتھ رسائی حاصل کرسکتے ہیں اور ہر سروس کیلئے ایک خاص مدت میں درخواست گزار کو نہ صرف ریلیف فراہم کیاجائے گا بلکہ اُن کو انتہائی عزت و احترام کے لئے ساتھ سائل کی دی گئی درخواست جواب دیا جائے گا۔