وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے جنگلی حیات کے تحفظ کوصوبے کی حیاتیاتی تنوع کے فروغ کے لئے انتہائی اہم قرار دیتے ہوئے محکمہ جنگلی حیات کے حکام کو ہدایت کی ہے کہ پرندوں اور دیگر جنگلی حیات کے غیر قانونی شکار کے مو¿ثر روک تھام کے لئے نتیجہ خیز اقدامات اٹھائے جائیں اور صوبہ بھر میں پرندوں کے غیر قانونی شکار کرنے والوں کے خلاف بلا امتیاز سخت کاروائیاں عمل میں لائی جائیں جن کی شروعات ان کے آبائی ضلع سوات سے کی جائیں تاکہ پرندوں اور دیگر نایاب جنگلی حیات کی افزائش نسل کو فروغ دے کر صوبے کے قدرتی حسن کو دوبالا کیا جاسکے۔ انہوں نے پرندوں کی افزائش نسل کے لئے موزوں جگہوں پر نجی شعبے کی شراکت سے منصوبے تیار کرنے جبکہ صوبے میں مزید نیشنل پارکس کے قیام کے لئے مجوزہ منصوبوں پر کام کی رفتارتیز کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکام کو صوبے کے مختلف اضلاع میں قائم نیشنل پارکس اور گیم ریزورز کے بہتر انتظام و انصرام اور ان کے تحفظ کے لئے بھی ایک جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات اٹھانے کی ہدایت کی ہے۔وہ گزشتہ روز صوبے میں نیشنل پارکس اور جنگلی حیات کے تحفظ کے سلسلے میں منعقدہ ایک اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ چیف کنزرویٹروائڈلائف کے علاوہ محکمہ جنگلی حیات کے دیگر متعلقہ حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔وزیراعلیٰ نے حکام کو عمارتی لکڑیوں اور نایاب نسل کے پرندوں کی غیر قانونی نقل و حمل کو روکنے کے لئے صوبہ بھر میں مستقل بنیادوں پر محکمہ ہائے جنگلات اور جنگلی حیات کی مشترکہ چیک پوسٹیں قائم کرنے کے لئے بھی ضروری اقدامات کو یقینی بنانے کی ہدایت کی۔