محکمہ خوراک صوبہ خیبرپختونخوا نے سوشل میڈیا پر چارسدہ گودام میں پڑی گندم کی حالیہ بارشوں کی وجہ سے خرابی کی تردید کی ہے۔ وزیراعلی خیبرپختونخوا کے مشیر برائے محکمہ خوراک میاں خلیق الرحمان کی ہدایت پر ڈائریکٹر محکمہ خوراک ہمراہ ڈپٹی کمشنر چارسدہ نے موقع پر پہنچ کر گودام میں پڑی گندم کا مکمل معائنہ کیا اور اس سلسلے میں محکمہ خوراک چارسدہ کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کا جائزہ لیا۔ فوڈ گودام چارسدہ میں کھلی (open) جگہ پر 1795 میٹرک ٹن گندم سٹور کی گئی ہیں، جس کو ترپالوں سے مکمل طور پر ڈھانپا ہوا ہے اور گندم مکمل طور پر محفوظ حالت میں ہیں۔محکمہ خوراک نے مزید وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ چارسدہ گودام کی موجودہ گندم ذخیرہ کرنے کی گنجائش صرف 3000 میٹرک ٹن ہے جبکہ ضلع چارسدہ کی ماہانہ ضرورت 7500 میٹرک ٹن سے زیادہ ہے اس لیے باوقت ضرورت گندم کو کھلی جگہ پر سٹور کیا جاتاہے جو کہ قواعد و ضوابط کے عین مطابق ہے۔چارسدہ گودام کو فراہم کی گئی گندم ضلع کی 30 اپریل 2021 کے ضروریات کے مطابق ہے جبکہ فراہم کی گئی گندم میں سے 5750 میٹرک ٹن گودام کے اندر سٹور ہے اور صرف 1795 میٹرک ٹن کھلی جگہ پر سٹور ہے جو کہ 6دن کے اندر فلور ملز کو ان کے کوٹہ کے مطابق جاری کر دی جائے گی۔ مزید برآں محکمہ خوراک صوبہ بھر میں گندم سٹوریج کی استعداد کو بڑھانے کیلئے مختلف منصوبوں پر تیزی سے عملدرآمد کر رہا ہے جن سے گندم کی ذخیرہ کرنے کی استعداد میں خاطر خواہ اضافہ ہوگا۔