وزیراعلی خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش اور مشیر انفارمیشن ٹیکنالوجی ضیاء اللہ بنگش کی زیر صدارت خیبرپختونخوا میں ڈیجیٹل ورک فورس متعارف کرنے کے حوالے سے کمیٹی روم سول سیکرٹریٹ پشاور میں اہم اجلاس ہوا۔ اجلاس میں سیکرٹری ہائیر ایجوکیشن خیبرپختونخوا داؤد خان، مینیجنگ ڈائریکٹر انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ خیبرپختونخوا ڈاکٹر علی محمود اور دیگر حکام نے شرکت کی۔

معاون اعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے اس موقع پر ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اس وقت 263 کالجز میں ہمارے ساتھ تقریباً 10 ہزار طلباء انفارمیشن ٹیکنالوجی اور کمپیوٹر سائنس کی تعلیم حاصل کر رہے ہیں جنہیں جدید دور کے ٹیکنالوجی کے ساتھ منسلک کرنا ہمارے ترجیحات میں شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ اعلی تعلیم انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے ساتھ مل کر کمپیوٹر سائنس کے طلباء پر مشتمل ڈیجیٹل ورک فورس تیار کرنے کے لیے تیار ہے۔
اس موقع پر ڈائریکٹر انفارمیشن ٹیکنالوجی برائے اعلی تعلیم کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ اگلے ہفتے ایک میٹنگ رکھی جائے تاکہ اس حوالے سے ہونے والے پیش رفت کا جائزہ لیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ڈگری کالجز اب منی یونیورسٹیز بن چکی ہیں لہذا جامعات کے ساتھ ساتھ یہاں پر بھی زیادہ توجہ کی ضرورت ہے۔

انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر نے معاون اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش اور ضیاء اللہ بنگش کو بریفنگ دیتے ہوئے آگاہ کیا کہ خیبرپختونخوا ڈیجیٹل ورک فورس کے ذریعے نہ صرف ہنر مند افراد پیدا کر سکتے ہیں بلکہ بیروزگاری مکاو میں بھی اس کا اہم کردار ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ مشیر ٹیکنالوجی ضیاء اللہ بنگش کی ہدایات کی روشنی میں محکمہ ہائیر ایجوکیشن کو تمام تر تکنیکی معاونت کے لیے دستیاب ہوگا۔