صوبائی وزیرتعلیم شہرام خان ترکئی نے محکمہ تعلیم، مانیٹرنگ سٹاف ، سی اینڈ ڈبلیو اوردیگرمتعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ نئے بننے والے اور اپ گریڈیشن والے سکول ڈیزائن کے مطابق ہوناچاہئیے سب سٹینڈرڈ اور ڈیزائن کے خلاف کام ناقابل قبول ہوں گے۔
کلاس رومز ہوادار ہونے چاہئے اور روشنی کا مناسب انتظام موجودہو جبکہ تعمیراتی کام میں اعلی کوالٹی کے میٹیریل کے استعمال کو بھی یقینی بنایاجائے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ محکمہ تعلیم کے مانیٹرنگ سٹاف کی ذمہ داری ہوگی کہ وہ ڈیزائن کے مطابق تعمیراتی کام کے تکمیل کو یقینی بنائے، ڈایزائن انجینئرز بھی مانیٹرنگ سسٹم کا حصہ ہوں گے، رپورٹ بروقت نہ فراہم کرنے والے حکام اور سب سٹینڈرڈ کام کرنے والے ٹھیکیداروں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائیگی۔

انہوں نے یہ ہدایات محکمہ تعلیم کے سکولوں کی ڈیزائن اور اے ڈی پی جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جاری کی۔ سیکرٹری ایجوکیشن ندیم اسلم چوہدری، چیف پلاننگ آفیسرحشمت خان، چیف مانیٹرنگ آفیسر، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسرز میل فیمیل صوابی، سی اینڈ ڈبلیو انجینئرز اوردیگرحکام اس موقع پرموجود تھے۔

وزیرتعلیم نے ڈیزائن انجینئرز کو ہدایت کی کہ محکمہ تعلیم کے جتنے بھی سکولوں میں نئے کمرے بن رہے ہیں ان کیلئے بھی ماڈرن ڈیزائن بنائے جائے، فرسودہ اور پرانے ڈیزائن ناقابل قبول ہیں۔ انہوں نے حکام کو ہدایت کی کہ کالو خان اورکالوڈھیرسکولوں کے متعلق رپورٹ جلد ازجلد بھیج دیاجائے۔

شہرام خان ترکئی نے کہاکہ مستقبل میں بننے والے سکولوں کے ڈیزائن میں گرینری کا خصوصی خیال رکھاجائے اور کم قیمت میں بہترین سکول بننے چاہئیے اور وہ تمام سکول جہاں تعیراتی کام جاری ہو ان کا وزٹ کرکے رپورٹ پیش کریں۔