خیبرپختونخوافوڈ سیفٹی اینڈ حلال فوڈ اتھارٹی نے ضلعی انتظامیہ اور محکمہ لائیو سٹاک کے ہمراہ پشاور میں ملاوٹ مافیا کے خلاف ایک بڑے کریک ڈوان کا آغاز کردیاہے۔ فوڈ اتھارٹی کی جانب سے موٹر وے ٹول پلازے پر ایک مشترکہ کاروائی میں تقریباً دو ہزار لیٹر سے زائد مضر صحت اور ملاوٹ شدہ دودھ کو تلف کردیا گیا۔ آپریشن میں ڈپٹی ڈائریکٹر آپریشنز شایان علی جاوا، اسسٹنٹ کمشنر صدر صہیب بٹ، لائیو سٹاک کے نعیم الحسن اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر واصف شاہ اور احمد نے شرکت کی۔ میڈیا سے گفتگو میں ڈپٹی ڈائریکٹر اپریشنز شایان علی جاوا کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر ملاوٹ مافیا کے خلاف پشاور میں ایک بڑے آپریشن کا آغاز کردیاگیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عوام کو صاف اور حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق دودھ کی فراہمی یقینی بنانے کے لئے موٹر وے ٹول پلازے پر صبح سویرے ناکہ بندی کی گئی، اور پشاور لائے جانے والے تمام دودھ فروشوں کو روک کر دودھ کے سامپلز چیک کئے گئے۔ جبکہ لائیو سٹاک ڈپارٹمنٹ کی جانب سے موقع پر ہی دودھ کے ٹیسٹ کئے گئے۔ ان کا کہنا تھا کہ کاروائی میں 6 افراد کے خلاف ایف ائی آرز بھی درج کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ فوڈ اتھارٹی کی جانب سے آگے بھی ضلعی انتظامیہ اور محکمہ لائیو سٹاک کے ساتھ ایسے آپریشنز کا سلسلہ جاری رہیگا۔ اسسٹنٹ کمشنر صدر صہیب بٹ کا کہنا تھا کہ حکومت عوام کو صاف اور معیاری خوراکی اشیاء فراہم کرنے کے لئے پر عزم ہے، اور دودھ میں ملاوٹ کے خلاف یہ آپریشن اس سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دودھ کے سامپلز میں کیمکلز کے ساتھ ساتھ 40 فیصد تک دودھ کی ملاوٹ بھی سامنے ائی۔ انہوں نے کہا کہ فوڈ سیفٹی اتھارٹی کے ساتھ آگے بھی صحت عامہ کے تحفظ کے لئے ایسے آپریشنز کا سلسلہ جاری رہیگا۔