ہماری حکومت پبلک پرائیویٹ پارٹرشپ کو ترجیح دے رہی ہے ، یہ موجود حکومت ہی کا اعتماد ہے جس پر سماجی فلاح و بہبود کے ادارے پبلک سیکٹر کیساتھ اس طرح کے انقلابی اقدامات اُٹھارہے ہیں، حسن فاونڈیشن 92 ملین کی لاگت سے یونیورسٹی میں تیس ہزار مربع فٹ پر سو مستحق طالبات کیلئے ہاسٹل تعمیر کرے گا، جامعات بالکل خودمختار ہیں، اس طرح کے اقدامات اُٹھانےسے اعلی تعلیم کو ترویج ملے گی ان خیالات کا اظہار وزیراعلٰی کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے شہید بینظیر ویمن یونیورسٹی میں ایک تقریب کے دوران کیا۔ وہ شہید بینظیر ویمن یونیورسٹی انتظامیہ اور حسن فاونڈیشن کے درمیان مفاہمتی یاداشت پر دستخط کی تقریب میں شرکت کررہے تھے۔ اس موقع پر معاون خصوصی برائے خوراک خلیق الرحمان سمیت وی سی ڈاکٹر رضیہ سلطانہ، حسن فاونڈیشن کی جانب سے ڈاکٹر مختار اور ڈاکٹر شاہدہ بھی موقع پر موجود تھیں۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے معاون خصوصی بتائے اعلٰی تعلیم و اطلاعات نے بتایا کہ ان کی حکومت پبلک پرائیویٹ پارٹرشپ کو ترجیح دے رہی ہے اور یہ موجود ہ حکومت ہی کا اعتماد ہے جس پر سماجی فلاح و بہبود کے ادارے پبلک سیکٹر کیساتھ اس طرح کے انقلابی اقدامات اُٹھارہے ہیں۔ حسن فاونڈیشن 92 ملین کی لاگت سےصوبے کے سو نادار اور مستحق طالبات کیلئے یونیورسٹی میں تیس ہزار مربع فٹ پر ہاسٹل تعمیر کرے گا جس سے ان طالبات کی تعلیمی راہ میں ایک روکاوٹ ختم ہوگی ۔ حسن فاونڈیشن سو طالبات کو نہیں بلکہ سو خاندانوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کرے گا۔