وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر برائے خوراک میاں خلیق الرحمن نے عوام کو سرکاری آٹے کی فراہمی یقینی بنانے کے لئے محکمہ خوراک کے ٹیم کے ہمراہ ضلع پشاور اور ضلع چارسدہ کے نو فلور ملز کا اچانک معائنہ کیا۔سرکاری آٹے کے معیار کو برقرار نہ رکھنے پر چارسدہ کے چار اور پشاور کے ایک فلور ملز کا کوٹہ منسوخ کردیا۔ محکمہ خوراک کے افسران کو سرکاری آٹے کی مارکیٹ میں فارہمی یقینی بنانے کے لئے محکمہ خوراک کے افسران کو ہدایات جاری کی۔ معیار اور مقدار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔
تفصیلات کے مطابق صوبے میں عوام کو سرکاری آٹے کی فراہمی یقینی بنانے کے لئے مشیر وزیر اعلیٰ برائے محکمہ خوراک میاں خلیق الرحمن نے محکمہ خوراک کے افسران کے ہمراہ ضلع نوشہرہ اور چارسدہ کے نو فلور ملز کا اچانک معائنہ کیا۔ انہوں نے پشاور کے عابد فلور ملز، صادق فلور ملز، چارسدہ کے کامران فلور ملز، عالم فلور ملز،مشترکہ سرحد پنجاب فلور ملز، چارسدہ فلور ملز، ہشت نغر فلور ملز، مدینہ فلور ملزاور لاثانی فلور ملز کا اچانک دورہ کیا۔ انہوں نے ملز میں سرکاری گندم کی فراہمی اورڈیلرز کو آٹے کی فراہمی کے ریکارڈ کا تفصیلی معائنہ کیا۔ اور موقع پر ہر ملز سے فون پر ڈیلرز سے کوٹے کی فراہمی اور آٹے کے بارے میں تفصیلات معلوم کی۔ انہوں نے موقع پر تمام ملز کے آٹے کے نمونے کی جانچ کی اور آٹے میں نمی کی مقدار کی زیادتی اور مقرر کردہ معیار کے مطابق نہ ہونے پر محکمہ خوراک کے مجاز حکام نے موقع پر پشاور کے ایک فلور ملز اور چارسدہ کے چار فلور ملزکے سرکاری آٹے کا کوٹہ منسوخ کردیا۔ اس موقع پر مشیر خوراک میاں خلیق الرحمن نے محکمہ خوراک کے افسران کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ معیار اور مقدار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔ عوام کو سرکاری آٹے کی مارکیٹ میں فراہمی یقینی بنانے کے لئے تمام وسائل برائے کار لائے جائیں گے۔