صوبائی وزیر زراعت ولائیو سٹاک محب اللہ خان نے کہا ہے کہ اپنا آج محفوظ بنانے اور آنے والی نسلوں کو ماحولیاتی آلودگی سے پاک رکھنے کیلئے زیادہ سے زیادہ شجر کاری انتہائی ضروری ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوات میں شانگلہ ٹاپ پر پودا لگا کر مون سون شجر کاری مہم کا افتتاح کرتے ہوئے کیا۔اس شجر کاری مہم میں ضلعی انتظامیہ محکمہ جنگلات اور ٹائیگر فورس کے جوان حصہ لے رہے ہیں۔ اس موقع پر صوبائی وزیر کے ہمراہ ڈیڈیک چئیر مین فضل حکیم خان، کمشنر ملاکنڈ سید ظہیر الاسلام، چیف کنزر ویٹر نارتھ فارسٹ نیاز علی،ڈی سی سوات اور دیگر متعلقہ حکام بھی ہمراہ تھے۔ محب اللہ خان نے کہا کہ شجر کاری ملک کی کی ترقی میں بنیادی حیثیت رکھتی ہے اسی وجہ سے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے شروع دن سے ہی اس پر خصوصی توجہ رکھی ہے اور وزیر اعظم کا گرین پاکستان کا خواب انشاء اللہ ضرور شرمندہ تعبیر ہو گا۔انہوں نے کہا کہ امسال خیبر پختونخوا میں 35لاکھ پودے جبکہ سوات میں 10لاکھ پودے لگانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے جسے ہر حال میں پورا کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ آج مختلف عوامل کی وجہ سے فضا میں زہریلی گیسیں وافر مقدار میں موجود ہیں جن کے مضر اثرات سے بچنے کیلئے زیادہ سے زیادہ شجر کاری نا گزیر ہو گئی ہے۔انہوں نے عوام سے بھی اپیل کی کہ وہ اس مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور زیادہ نہیں تو کم از کم ہر فرد ایک پودا لگا کر اس مہم کو کامیاب بنائیں۔