وزیر خوراک قلندر خان لودھی نے کہا ہے کہ اس وقت محکمہ خوراک کے پاس ایک لاکھ 45 ہزار میٹرک ٹن گندم موجود ہیں اور صوبے کے فنکشنل فلور ملز کو روزانہ کی بنیاد پر 2000 میٹرک ٹن گندم کی ریلیز جاری ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز اپنے دفتر میں صوبے میں گندم موجودگی کے تازہ صورتحال کے بارے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا ہے۔ اجلاس میں سیکرٹری محکمہ خوراک خوشحال خان، ڈائریکٹر محکمہ خوراک زبیر احمد ودیگر حکام بھی موجود تھے۔ اس موقع پر وزیر خوراک نے کہا کہ پاسکو سے ایک لاکھ ٹن گندم کی ترسیل شروع ہوچکی ہے جبکہ مزید 3لاکھ میٹرک ٹن گندم کا معاہدہ بھی پاسکو کے ساتھ طے پاچکا ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ اس کے علاوہ 3لاکھ میٹرک ٹن گندم درآمد کرنے کے لئے بھی لائحہ عمل جاری ہے۔ وزیر خوراک کا کہنا تھا کہ صوبے میں اس
وقت آٹا وافر مقدار میں موجود ہے جبکہ پنجاب سے بھی آٹے کی ترسیل شروع ہوچکی ہے۔
قلندر خان لودھی نے کہا ہے کہ صوبے میں آٹے کی کسی قسم کی قلت نہیں ہے اور 20 کلو آٹا بیگ کی 860 روپے پر پورے صوبے میں فروخت کی جارہی ہے۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت دی ہے کہ محکمہ خوراک کی جانب سے آٹا ڈیلرز کے متعلق وضع کردہ پالیسی پر عمل درآمد یقینی بنائے، عوام کو سستے دامو آٹے کی ترسیل ہر صورت یقینی بنائی جائے گی۔ انہوں نے کہا ہے کہ عوام کو خدمات کی فراہمی تحریک انصاف حکومت کی اولین ترجیح ہے جبکہ وزیراعلی خیبرپختونخوا محمود خان کی قیادت میں محکمہ خوراک عوام کو سستے آٹے کی فراہمی ہر صورت یقینی بنا رہی ہے۔