صوبائی وزیر ابتدائی و ثانوی تعلیم تعلیم اکبر ایوب خان نے کہا ہے کہ قبائلی اضلاع میں تعلیمی نظام کی بہتری اور سکولوں کو سہولیات کی فراہمی کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں گے، تاکہ قبائلی عوام کو انضمام کے فوائد بہتر طریقے سے مل سکے۔ انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع میں سکولوں کی تعمیر، اپ گریڈیشن، تدریسی عملے کی کمی کو پورا کرنا، سکولوں میں سہولیات کی فراہمی اور ڈراپ آؤٹ ریشو میں کمی لانے کے ساتھ ساتھ معیاری تعلیم کی فراہمی موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ صوبائی وزیر تعلیم اکبر ایوب خان نے یہ باتیں پاکستان کے مایہ ناز کرکٹر شاہین شاہ آفریدی کو قبائلی اضلاع کے دو سکولوں کے لئے تدریسی و سائنسی سامان حوالہ کرنے کے لئے منعقدہ تقریب کے موقع پر کیں۔ ملاقات میں سیکرٹری ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن ندیم اسلم چوہدری، محمد نواز شانگلہ، یونیسیف کی طرف سے فواد شاہ اور دیگر حکام بھی تقریب میں موجود تھے۔ صوبائی وزیر تعلیم نے گورنمنٹ پرائمری سکول اشرف کلے اور گورنمنٹ پرائمری سکول گل احمد کلے سکولوں کے لئے محکمہ تعلیم اور یونیسیف کے تعاون سے طلباء کے لئے لرنینگ کٹس، اساتذہ اور طلباء کے لئے فرنیچر، بلیک بورڈز اور دوسرا سامان حوالہ کیا جس سے مجموعی طور پر 429 طلباء مستفید ہوں گے۔ اکبر ایوب خان نے کرکٹر شاہین شاہ آفریدی کا قبائلی اضلاع میں تعلیم کی بہتری کے لیے لئے کی جانے والی کاوشوں اور ان کی خصوصی دلچسپی پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ مستقبل میں بھی قبائلی اضلاع میں تعلیم کے فروغ کے لئے آپ کی خدمات حاصل کی جائے گی اور انہوں نے وعدہ کیا کہ اس سامان کے علاوہ قبائلی اضلاع کے سکولوں کے لیے سپورٹس کٹس بھی فراہم کی جائے گی۔ وزیر تعلیم نے دورہ انگلینڈ کے لیے پاکستان کرکٹ ٹیم کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کیا اور کرکٹر شاہین شاہ آفریدی کو دورہ ہری پور آنے کی دعوت دی جو کہ انہوں نے قبول کر لی۔