سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی مشتاق احمد غنی کی اپوزیشن اراکین کی طرف سے جانبداری کے الزام کے جواب میں آج کے اجلاس میں وضاحت، پچھلا اجلاس ساٹھ اراکین کے الیکشن کمیشن میں رکنیت معطل ہونے کی بنا پر ملتوی کیا گیا، اپوزیشن کے کافی سارے اپنے ممبران کی رکنیت معطل ہونے کے باوجود ریکوزیشن پر دستخط کئے گئے، 17 فروری کو پارلیمانی لیڈران کا اجلاس انکا ایجنڈہ سننے کے لئے بلایا گیا جسکا بائیکاٹ کیا گیا، اپوزیشن کے بعض ممبران نے اجلاس کے دوران انتہائی نامناسب اور غیر پارلیمانی الفاظ استعمال کئے۔ آئین کے رول 227 کی شق 2 کے تحت سپیکر کااختیار ہے کہ ان ممبران پر تمام اجلاسوں میں شرکت پر پابندی لگادیں۔ میں بطور کسٹوڈین آف دی ہاوس جمھوری و پارلیمانی روایات کی پاسداری کرتے ہوئے انتہائی قدم سے گریز کرونگا۔ ایوان میں ہلڑبازی کرنے والے اراکین کو تنبیہ کرتا ہو کہ وہ جمھوری روایات کی پاسداری کریں اور اس مقدس ایوان کی مزید توھین نہ کریں۔