کے پی فوڈ اتھارٹی کی پشاور اور بنوں میں کاروائیاں، حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی بیکری و فیکٹری سیل، 300 کاٹن ایکسپائر پاپس اور تین ہزار لیٹر جعلی مشروبات تلف، کے پی فوڈ اتھارٹی کی ٹیموں نے اتوار کو پشاور کے پھندو روڈ اور بنوں میں دو مختلف کاروائیوں کے دوران حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی پر ایک بیکری بممعہ پروڈکشن یونٹ اور فیکٹری کو سیل کردیا جبکہ بنوں میں کاروائی کے دورنا تین سو کاٹن ایکسپائر پاپس اور تین ہزار لیٹ جعلی مشروبات تلف کیں۔ ڈی جی فوڈ اتھارٹی سہیل خان کا کہنا ہے کہ ملاوٹیوں کیخلاف کاروائیاں جاری ہیں اور فوڈ اتھارٹی کی ٹیمیں ہفتہ و اتوار بھی ملاوٹ مافیا کو ٹھکانے لگانے کیلئے مارکیٹ میں موجود رہتی ہیں۔ ڈائریکٹر آپریشنز ڈاکٹر عظمت وزیر نے آپریشنز کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ عوامی شکایات سیل پر ملنے والی معلومات پر کاروائی کرتے ہوئے پشاور کے پھندو روڈ پر واقع بیکری اور گُڑ مینچی بنانے والی فیکٹری کو حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی پر سیل کردیا گیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ بیکری میں گندے انڈے سمیت نان فوڈ گریڈ کلرز کا استعمال کیا جاتا تھا جبکہ فیکٹری کی صفائی کی صورتحال انتہائی ابتر تھی۔ کاروائی کے دوران دو بندوں کو بھی حوالہ پولیس کردیا گیا۔ دوسری جانبے کے پی فوڈ اتھارٹی بنوں ڈویژن نے ڈپٹی ڈائریکٹر ذیشان محسود کی سربراہی میں نظام بازار میں کاروائی کرتے ہوئے ایکسپائرڈ پاپس اور کولڈ ڈرنکس کے خلاف میگا آپریشن لانچ کیا۔ آپریشن کے دوران بڑی مقدار میں 300 کاٹن ایکسپائرڈ پاپس اورمس برانڈڈ 3000 لیٹر کولڈ ڈرنکس برآمد کر لئے گئے۔ ڈیشان محسود کے مطابق فوڈ اتھارٹی کی ٹیم نے موقع پر ایکسپائرڈ پاپس اور جعلی مشروبات کو تلف کر دیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ممنوعہ سامان بیچنے پر ہول سیل ڈیلر کو بھاری جرمانہ اور
گودام کو سیل کر دیا گیا۔