صوبائی وزیر برائے ابتدائی و ثانوی تعلیم اکبر ایوب خان نے کہا ہے کہ صوبے کے تمام اضلاع کے سکولوں کو ہرسال سپورٹس فنڈز مہیا کیا جائے گا تاکہ تعلیم کے ساتھ ساتھ بچوں کی جسمانی نشونما پر بھی بہتر توجہ دی جاسکے انہوں نے کہا کہ اگلے سال سپورٹس کے مقابلوں میں مدرسے کے بچوں کو بھی شامل کیا جائے گا کیونکہ ہمارے تقریبا ڈھائی لاکھ بچے مدرسوں سے تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سالانہ سکول کی سپورٹس پروگرام کی تقسیم انعامات کی تقریب میں بطورے مہمان خصوصی شرکت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ممبر صوبائی اسمبلی ارباب جہانداد، ممبر صوبائی اسمبلی عبدالسلام آفریدی، سپیشل سیکرٹری محکمہ ایلمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن ظریف المانی، ایڈیشنل سیکرٹری فائنانس مشرف خان،  ڈائریکٹر ابتدائی و ثانوی تعلیم حافظ محمد ابراہیم اور دیگر افسران موجود تھے۔ اکبر ایوب خان نے کہا کہ محکمہ تعلیم میں کافی تجربہ کار اور باصلاحیت آفیسرز موجود ہیں جن کے تجربے کو استعمال میں لا کر ہم محکمہ کو اور بھی بہتر اور صحیح سمت پر چلا سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ موجود حکومت  پرنسپلز، اساتذہ اور دیگر تمام ملازمین کی جائز مطالبات پورا کرنےکیلئے ٹھوس اقدامات اٹھا رہی ہے تاکہ وہ بچوں کو بہتر تعلیم دلوانے میں ہماری مدد کر سکے۔ صوبائی وزیر تعلیم نے کہا کہ مجھے دفاتر اور سکولوں میں حاضری کے متعلق کسی قسم کی کوتاہی نہیں چاہیے اور کوتاہی برتنے والوں کے خلاف ای اینڈ ڈی رولز کے مطابق سخت سے سخت کاروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ نئے ضم شدہ اضلاع کے سکولوں کے معیار کو بہتر بنانے اور ان کو صوبے کے دوسرے اضلاع کے برابر لانے کے لئے حکومت جامع حکمت عملی کر رہی ہے اور وہ دن دور نہیں جب نئے ضم شدہ اضلاع میں بھی میں تعلیمی معیار پروان چڑھے گا اور وہاں کے سکول بھی صوبے کے دوسرے اضلاع کے برابر ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ پشاور اور اور قبائلی اضلاع  کے سکولوں کے لئے آئندہ  اے ڈی پی میں میں ایک بڑا پیکج رکھا جائے گا جس سے یہاں کے سکولوں کے حالت آ پ گریٹ ہو جائے گی۔