صوبائی وزیرتعلیم اکبر ایوب خان نے کہا ہے کہ اسکولوں میں اساتذہ کو تمام تر سہولیات سے آراستہ کیا جائے گا اور تعلیم سے متعلق کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی کیونکہ یہ چھوٹے بچوں کے مستقبل کا معاملہ ہے اور اس پر نہ صرف ہمارے صوبے خیبر پختونخواہ بلکہ پورے پاکستان کے روشن مستقبل کا دارومدار ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی چیز کو آسان نہیں لیا جائے گا اور تمام امور کو احسن طریقے سے  نبھایا جائے گا۔ اکبر ایوب خان نے کہا کہ ہمارے گورنمنٹ میں ریفارمز ایجنڈے پر کوئی پابندی نہیں ہے آپ لوگ جتنی بہتر اصلاحات لاسکتے ہیں لائے ہم ان کو موثر بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اب موقع ہے کہ ہم سکولوں، اساتذہ بلکہ پورے تعلیمی معیار کو بہتر بنا لے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈائریکٹریٹ آف ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن کے دورے کے موقع پر منعقد اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ڈائریکٹر ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن حافظ محمد ابراہیم، تمام اضلاع کے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر اور دیگر حکام موجود تھے۔ اکبر ایوب خان نے محکمہ تعلیم کے تمام افسران کو ہدایت جاری کی کہ وہ اپنے اپنے اضلاع پر بھرپور توجہ دے اور ان میں موجود کمی کوتاہی کو اگلے اجلاس میں پیش کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ تمام اضلاع میں جو بھی پوسٹس خالی ہیں ان پر میرٹ کے مطابق جلد از جلد بھرتیاں کی جائیں تاکہ غریب عوام کو روزگار مل سکے۔ انہوں نے مزید ہدایت  کی کہ انڈیپنڈنٹ مانیٹرنگ یونٹ کو صوبے کے تمام اضلاع بشمول قبائلی اضلاع میں فعال بنایا جائے اور ان کے طرف سے موصول ہونے والے رپورٹس پر سخت ایکشن لیا جائے۔ صوبائی وزیر تعلیم نے کہا کہ محکمہ تعلیم کے بجٹ کو احسن طریقے سے استعمال کیا جائے اور ایک بھی روپیہ واپس نہیں ہونا چاہیے تک جو بھی درپیش مسائل ہیں ان کے حل کے لیے اس کو  یوٹیلائز کیا جاسکے۔ اکبر ایوب خان نے کہا کہ میں ہر ماہ ڈی پی ایس سی کے اجلاس میں خود شرکت کروں گا اور اچھی کارکردگی دکھانے والے ملازمین کو سرٹیفکیٹ اور نقد انعامات دوں گا تاکہ ان کی حوصلہ افزائی کی جا سکے کیونکہ اس کے بعد پوسٹنگ،ٹرانسفراور پروموشن سب کارکردگی کی بنیاد پر کیے جائیں گے۔