ملاکنڈ ڈویژن کے دور افتادہ علاقوں میں گلیشیائی جھیلوں کو پھٹنے سے روکنے کے لئے شجرکارہ مہم تیزی سے جاری ہے۔ تفصیلات کے مطابق محکمہ ریلیف بحالی و آبادکاری،خیبر پختونخوا اور گلاف2پراجیکٹ کے زیر اہتمام دیر اپر کے علاقہ کمراٹ اور سوات کے علاقہ اتروڑ و گبرال میں پانچ ہزار سے زائد پودے لگائے گئے۔اسسٹنٹ ڈائریکٹر پی ڈی ایم اے سردار زیب اور صوبائی کوارڈینیٹر گلاف2پراجیکٹ فہد بنگش نے خود ان دور افتادہ علاقوں میں نہ صرف پودے لگائیں بلکہ کثیر تعداد میں پودے مقامی لوگوں میں تقسیم کرکے شجرکاری مہم سے آگاہ بھی کیا۔اتروڑ میں شجرکاری مہم کے دوران مقامی لوگوں سے خطاب میں فہد بنگش نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے شمالی علاقوں میں موجود گلیشئیرز کو خطرات لاحق ہیں،ان خطرات میں کمی لانے کے لئے صوبائی حکومت اور گلاف پراجیکٹ مل کر مختلف منصوبوں پر عمل پیرا ہیں جس میںخیبر پختونخوا کے پانچ اضلاع میں 250 سے زائدچھوٹے انفراسٹرکچر منصوبے، ارلی واننگ سسٹم کی تنصیب کے ساتھ ساتھ خطرات سے دوچار وادیوں میں کثیر تعداد میں شجرکاری بھی شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شجرکاری کا مقصد سیلاب کی تباہ کاریوں اور زمینی کٹائو کو روکنے کے لئے مقامی لوگوں میں شعور بیدار کرنا ہے۔