خیبر پختونخوا کے وزیر قانون و پارلیمانی امور اور انسانی حقوق سلطان محمد خان نے خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن کے کیپسیٹی بلڈنگ اور نان-سلیبس ریکروٹمنٹ کے بارے میں مارکنگ سسٹم کے حوالے سے منسٹیریل کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف وفاقی وصوبائی حکومت نظام میں شفافیت کو یقینی بنا رہی ہیں اور اس ضمن میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کرے گی بدھ کے روز سول سیکرٹریٹ پشاور میں خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن کے نان۔ سلیبس ریکروٹمنٹ کے مارکنگ سسٹم کے از سر نو تقابلی جائزہ کے حوالے سے منسٹریل کمیٹی کے پہلے اجلاس کا انعقاد کیا گیا جس میں وزیراعلی کے مشیر برائے ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن ضیاء اللہ بنگش سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ سید جمال الدین شاہ سیکرٹری ھائیر ایجوکیشن منظور احمد چیئرمین پبلک سروس کمیشن فریداللہ خان اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی اجلاس میں وزیر قانون کو پبلک سروس کمیشن کے ریکروٹمنٹ اور مارکنگ سسٹم میں ماضی میں کئے گئے ترامیم کے حوالے سے بریفنگ دی گئی اس موقع پر چیئرمین کے پی پی ایس سی نے تجویز دیتے ہوئے کہا کہ یہ بہتر موقع ہے کہ پبلک سروس کمیشن کے مارکنگ سسٹم اور امتحانی طریقہ کار کا ازسرنو تقابلی جائزہ لیاجائے اور رٹا سسٹم سے چھٹکارا حاصل کرکے ذہین امیدواروں کو ایک شفاف اور انصاف پر مبنی نظام فراہم کیا جائے جو موجودہ صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہے وزیر قانون نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کا کلیئر ویژن ہے کہ نظام میں بہتری لانا ہے اور شفافیت کو یقینی بنانا ہے وزیر قانون نے اجلاس کے آخر میں ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ اجلاس کے منٹس تمام شرکاء کو فراہم کئے جائیں اور تمام متعلقہ افسران اگلے اجلاس میں مثبت تجاویز کے ساتھ پوری تیاری کیساتھ شرکت کریں تاکہ پبلک سروس کمیشن ریکروٹمنٹ اور مارکنگ سسٹم میں قابل امیدواروں کو شفاف نظام کی فراہمی کو جلد از جلد یقینی بنایا جا سکے۔